دعا آنکھوں سے قبول ہوتی دیکھو گے،، بس رات کویہ ایک تسبیح کر لو

جو کہتا ہے اس کی دعا قبول نہی ہوتی دعا قبول ہوتی ہے لیکن اس کو قبول کروانے کے بھی کچھ طریقے ہوتے ہیں کچھ اصول ہوتے ہیں آپ کوآج ایک دعا بتائیں گے جس سے انشاء اللہ آپ کی دعا ظرور قبول ہوگی ایک وظیفہ ہے جس کے کرنےسے آپ کی دعا قبول ہوگی اورآپ اپنی آنکھوں سے دیکھیں گے . جو کہتا ہےمیری دعا نہی قبول ہوتی مجھے نوکری نہی ہے ملتی انشاءاللہ وہ اس طریقے سے دعا مانگے گا اس کی دعا اللہ ظرور قبول فرمائے گا .

ہردعا اللہ تعالی کی بارگاہ میں قبول ہوتی ہےگناہ گارآدمی ہو یا بدکار سے بدکار آدمی ہے حتہ کے اللہ کو نہ ماننے والا غیر مسلم ہے اس کی بھی دعا قبول ہوتی ہے دعا ایک

عظیم نعمت اور انمول تحفہ ہے ، اس دنیا میں کوئی بھی انسان کسی بھی حال میں دعا سے مستغنی نہیں ہوسکتا ،دعا اللہ کی عبادت ہے، دعا اللہ کے متقی بندے اور انبیا ئے کرام علیہم السلام کے اوصافِ حمیدہ میں سے ایک ممتاز وصف ہے ، دعا اللہ تعالی کے دربارِ عالیہ میں سب سے باعزت تحفہ ہے ، اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا : لَیْسَ شَیْءٌ أکْرَمَ عَلَی اللّٰہِ عَزَّ وَجّلَّ مِنَ الدُّعاء (دعا سے بڑھ کر اللہ تعالی کے یہاں کوئی چیز باعزت نہیں) دعا اللہ تعالی کے یہا ں بہت پسندیدہ عمل ہے ، دعا سے اللہ تعالی کے غصہ کی آگ مدھم پڑتی ہے، دعا اللہ تعالی کی ذا ت پر بھروسہ کی گائیڈ لاین ہے ،

دعا آفت و مصیبت کی روک تھام کا مضبوط وسیلہ ہے، بلاشبہ دعا اپنی اثر انگیزی اور تاثیر کے لحاظ سے مومن کا ہتھیار ہے ، اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: اَلدُّعَاءُ سِلاَحُ الْمُؤمِنِ وَعِمَادُ الدِّیْنِ وَنُوْرُ السَّمٰواتِ وَالأرْضِ (دعا موٴمن کا ہتھیار ،دین کا ستون اور آسمان وزمین کی روشنی ہے ، اللہ نے اپنے بندوں کو دعا کی تاکید کی ہے ، اس کی قبولیت کا وعدہ کیاہے اللہ تعالی نے قرآن مجید میں صاف صاف اعلان کیا : وَإذَا سَألَکَ عِبَادِيْ عَنِّيْ فَإنِّي قَرِیْبٌ اُجِیْبُ دَعْوَةَ الدَّاعِ إذَا دَعَانِ(جب میرے بندے میرے بارے میں دریافت کریں ،

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.