پاکستان میں عام طوپر باپ کا بیٹی کیساتھ کیا جانے والاایسا کام جس سے اس کی بیوی اس پر حرام ہو جاتی ہے ، مفتی صاحب نے بتا دیا

اسلام آباد  پاکستان میں عام طوپر باپ کا بیٹی کیساتھ کیا جانے والاایسا کام جس سے اس کی بیوی اس پر حرام ہو جاتی ہے ، مفتی صاحب نے بتا دیا

۔۔۔۔باپ بیٹی بیٹا ماں ساس بہو سسر یہ سب ہمارے معاشرے کے خوبصورت اور پاکیزہ رشتے ہیں اور شاید ایک دوسرے کے لئے جائے امان بھی۔ تاہم اکثر علما حضرات ایسے ایسے مسئلے بیان فرماتے ہیں کہ سب کچھ دھندلا جاتا ہے۔ اب ایسے میں ہی مفتی طارق مسعود کا وہ بیان پھر سے سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے اور جس میں ایک باپ کے لئے اپنی بیٹی کو پیار کرنے کے طریقے اور اسکی حدود بیان کر رہے ہیں اور پھر بہو اور سسر کے درمیان کسی جنسی یا شہوانی تعلق پر بھی تفصیلات کھول کر بیان کر رہے ہیں۔ مفتی صاحب فرماتے ہیں کہ بیٹی کو باپ گال پر یا ہونٹوں پر پیار نہ کرے بلکہ سر پر پیار دے جب وہ 11 سال کی ہوجائے۔ اور جب وہ بالغ ہوجائے تو اسکے قریب بھی نہ جائے۔ وہ کہتے ہیں کہ اگر ایسا ہوا تو خدشہ ہے کہ باپ کے دل میں بیٹی کے لئے شہوت پیدا ہوجائے۔ اور اگر ایسا ہوا تو اس بیٹی کی ماں یعنی اس شخص کی بیوی اسکے لئے حرام ہوجائے گی۔ وہ بتاتے ہیں کہ ان کو کئی فون آتے ہیں کہ بیٹی سے سر دبوا رہے تھے سر میں تیل لگوا رہے تھے کہ شہوت پیدا ہوگئی اب کیا کریں۔ تو اب کیا کریں اب بیوی حرام ہو گئی ہے۔ اسی طرح وہ سسر اور بہو کے درمیان اور ساس اور داماد کے درمیان جنسی تعلق کو بھی بیان کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ قرآن و حدیث اور فقہی طور پر ثابت ہے کہ ماں یا بیٹی کے ساتھ ایک کے بعد نکاح حرام ہے۔انکا کہنا ہے کہ اکثر بہوہیں انہیں فون کرکے اپنے سسر کے حوالے سے شکایت کرتی ہیں۔ مفتی طارق کے یہ بیانات سوشل میڈیا پر پھر گردش کر رہے ہیں۔ اور سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے جہاں ان پر تنقید کی جارہی ہے تو وہیں یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ یہ ایک اہم مسئلہ ہے جس پر بات کی گئی ہے۔ تاہم تنقید کرنے والے صارفین کا کہنا ہے کہ ہماری بھی بیٹیاں ہیں اور یہ سب غلیظ خیالات ہم کبھی سوچ بھی نہیں سکتے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *